وہ جُگنو ھے ستارا کیوں کریں ھم
نہیں ھے وہ ھمارا، کیوں کریں ھم

کسی کے ساتھ گھُل مِل سے گئے ھو
بھلا اِس کو گوارا کیوں کریں ھم

جن آنکھوں میں سمندر ڈوبتا ھے
اُن آنکھوں سے کنارہ کیوں کریں ھم ؟

بہت سے کام ھیں کرنے کے صاحب!
محبٌت پر گزارہ کیوں کریں ھم ؟

جہاں سارا وفا نا آشنا ھے
فقط شکوہ تمھارا کیوں کریں ھم؟

انا نے باندھ رکھٌا ھے ھمیں بھی
تُمھیں ھر پل پُکارا کیوں کریں ھم؟

بچھڑنے کی تمنٌا ھے تو جاؤ
بچھڑنے کا اشارہ کیوں کریں ھم ؟

مقابل آئینہ ھے، تم نہیں ھو
تو پھر لَٹ کو سنوارا کیوں کریں ھم

محبٌت ھو گئ بس کہہ دیا نا
خطااب یہ دوبارہ کیوں کریں ھم؟

یہ دل کچھ رکھ لیا ھےپاس،تم پہ
فدا سارے کا سارا کیوں کریں ھم

Wo Jugnu Hai Sitara Kyun Kren Hum

Axact

Axact

Vestibulum bibendum felis sit amet dolor auctor molestie. In dignissim eget nibh id dapibus. Fusce et suscipit orci. Aliquam sit amet urna lorem. Duis eu imperdiet nunc, non imperdiet libero.

Post A Comment:

0 comments: