لاہور: ورلڈ کپ میں ریویو کے حوالے سے پاکستان نے حکمت عملی تیار کر لی۔
تفصیلات کے مطابق کسی بھی غلط فیصلے پر ریو یو لینے کے معاملے میں پاکستانی ٹیم کئی بار گھاٹے کا سودا کرلیتی ہے، اکثر کہا جاتا ہے کہ گرین شرٹس کو آئی سی سی قوانین خاص طور پر ایل بی ڈبلیو کے معاملے میں ابھی بہت کچھ سیکھنے کی ضرورت ہے،بولرز کی جلد بازی نقصان دہ ثابت ہوتی ہے۔
اپنے ایک انٹرویو میں سرفراز احمد نے کہا کہ ٹیم میٹنگز میں ریویو لینے کی پالیسی وضع کرلی گئی ہے۔ صرف اس وقت تھرڈ امپائر سے رجوع کیا جائے گا جب کپتان، وکٹ کیپر اوربولرمتفق ہونگے،وقت کم ہونے کی وجہ سے کئی بار غلط فیصلہ بھی ہوجاتا ہے لیکن پوری کوشش کرینگے کہ میگا ایونٹ میں ریویو کا بہتر استعمال کریں۔ آسٹریلیااور نیوزی لینڈ میں پیسرز کی بولنگ پر کیپنگ مشکل نہیں بلکہ آسان ہوگی،ایشیائی کنڈیشنز میں ناہموار پچز پر اوپر نیچے آنے والی گیند  کے مطابق سیٹ ہونا پڑتا ہے لیکن باؤنسی ٹریکس پر یہ مسئلہ نہیں ہوگا۔اپنی بیٹنگ کے بارے میں انھوں نے کہا کہ میری دعا ہے کہ احمد شہزاد اور محمد حفیظ ٹیم کو عمدہ آغاز فراہم کرنے میں کامیاب ہوں۔
البتہ اگر کسی وجہ سے مجھے تیسرے اوپنر کا کردار نبھانا پڑا تو اس چیلنج کو قبول کرنے کیلیے تیار ہوں، اپنا ہوم ورک مکمل کرلیا،کوچز اور سینئرز کی رہنمائی کی بدولت اچھا پرفارم کرنے کی کوشش کروں گا، انھوں نے کہا کہ میں مختلف کنڈیشنز کا کوئی اضافی دباؤ نہیں لے رہا، بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور اور اسپن بولنگ کوچ مشتاق احمد نے بتا دیا ہے  کہ میگاایونٹ میں پل شاٹ اور دیگر اسٹروکس کس طرح موثر ہونگے،یو اے ای میں کیویز نے بھی میری جارحانہ بیٹنگ دیکھنے کے بعد گیند آگے کرنا شروع کردی تھی،کوچز مجھے پہلے ہی اس ممکنہ حکمت عملی سے آگاہ کرچکے تھے، آسٹریلیا و نیوزی لینڈ میں بھی جلد کنڈیشنز سے مطابقت پیدا کرلوں گا، سرفراز نے کہا کہ ہماری تیاریاں مکمل ہیں قوم بھی ٹیم کی کامیابی کیلیے دعا کرے۔
Axact

Axact

Vestibulum bibendum felis sit amet dolor auctor molestie. In dignissim eget nibh id dapibus. Fusce et suscipit orci. Aliquam sit amet urna lorem. Duis eu imperdiet nunc, non imperdiet libero.

Post A Comment:

0 comments: